ڈینگی سرکار اور اس کے مریدوں سے بچاؤ کا ٹوٹکہ

انڈین فلموں کے معروف اداکار نانا پاٹیکر کا ایک مشہور ڈائلاگ تھا کہ ‘‘ سالا ایک مچھر آدمی کو ہیجڑا بنا دیتا ہے ‘‘ اس وقت تو شاید لوگوں کو اس فقرے کی سمجھ نہ آئی ہو مگر جب سے ہمارے ملک میں ڈینگی مچھر نے دھاوا بولا ہے ۔۔ بہت سوں کو اس کی سمجھ آ گئی ہے اور بہت سے تو مچھر کا نام سن کے خوف سے تھر تھر کانپنے بھی لگ جاتے ہیں ۔

لوگوں کی تو بات دور کی ٹھرتی ہے ہم بذات خود مچھر سے بڑا ڈرتے ہیں ۔ یہ ڈر ہمیں اس وقت سے پیدا ہوا جب ڈینگی سرکار نے لاہور میں پہلی دفعہ دھاوا بول کے ہمیں بھی اپنی لپیٹ میں لے کر ادھ موا کر دیا تھا۔تب سے اب تک ہم ایک ‘‘ عام مچھر ‘‘ ( ڈینگی سرکار کا مرید ) کو بھی جہاں دیکھ لیں ہمیں اس پر ڈینگی کا ہی گمان ہوتا ہے اور ہماری پہلی کوشش یہی ہوتی ہے کہ سب کام چھوڑ کے پہلے اس کو پھڑکا دیں ۔۔۔ کیونکہ اگر ہم نے اس کو نہیں پھڑکایا تو یہ ہمیں پھڑکانے میں دیر بالکل نہیں لگائے گا ۔

دوسرے بہت سے سیانوں کی طرح ہم نے بھی مچھروں کو بھگانے کے لئے بہت سے ٹوٹکے آزمائے ہیں مگر سب بیکار ۔ ہزاروں روپے مچھر مار سپرے ، کوائل ، آئل ، کریم اور دیگر چیزوں پر ضائع کرنے کے باوجود شام پڑتے ہی یہ ‘‘ ڈھیٹ مچھر ‘‘ ہمارے کانوں میں کسی گندے اور غلیظ سیاستدان کی طرح بھوں بھوں کرنا شروع ہوجاتے ہیں ۔

lemon-02چند دن پہلے ہماری بچی نے کہیں سے پڑھا ہوا ہمیں ایک ٹوٹکہ بتایا جو کہ ‘‘ ایک عدد لیموں اور چند لونگ ‘‘ پر مشتمل تھا ۔پہلے تو ہم نے سوچا کہ یہ بھی بس ایویں ہی ہوگا ۔ ہم نے اتنی بڑی بڑی کیمپنیوں کے مہنگے مہنگے سپرے تک استمال کر لئے اس سے کچھ نہیں بنا تو بھلا اس سے کیا ہوگا ۔ پھر سوچا کہ چلو اس میں کونسا زیادہ خرچہ آتا ہے ، آزما لیتے ہیں ۔۔ سو لیموں والے ٹوٹکے کو آزمایا گیا اور شدید حیرت ہوئی کہ پوری رات میں ایک بھی مچھر کمرے میں نظر نہیں آیا۔

ایک عدد تازہ لیموں لیجئے اور اسے درمیان میں سے کاٹ کر دو ٹکڑے کر لیں ۔۔۔ کسی بھی ایک ٹکڑے پر چار یا پانچ لونگ لگا کر کمرے میں رکھ دیں ۔۔۔۔۔پُرسکون نیند سونے پر ہمیں دعائیں دیں کیونکہ اب آپ کے کمرے میں ڈینگی اور اس کے مریدین ( عام مچھر ) کا داخلہ ممنوع ہوچکا ہے ۔

About

7 thoughts on “ڈینگی سرکار اور اس کے مریدوں سے بچاؤ کا ٹوٹکہ

    1. جی محترم سر جی ۔۔۔بالکل ایسا ہی ہے ۔۔۔ مجھے تجربہ کرتے ہوئے آج پانچواں دن ہے ۔۔ میرے کمرے میں مچھروں کا نام و نشان تک نہیں ہے ۔۔

    1. سرکار دیر بڑی ہوگئی تھی ورنہ آپ کے ڈیرے پر حاضری کے بغیر ہم بھلا آگے کیسے جاسکتے تھے۔۔۔انشااللہ پھر کبھی سہی

  1. نجیب بھائی، مچھروں‌کو مجھ سے کچھ زیادہ ہی پیار ہے، جہاں محفل میں‌تین چار لوگ بیٹھے ہونگے یا کمرے میں‌دوسرے لوگوں کی صحبت ہوگی وہاں یہ سارے مچھر دوسروں‌کو چھوڑ کر مجھے چھومنے چاٹنے چلے آتے ہیں۔ اُن کی محبت اپنی جگہ لیکن جو تکلیف مجھے ہوتی ہے وہ بیان کرنے کے قابل نہیں۔ ساری چیزیں میں بھی آزما چکا ہوں اور آج کل تو دھوئیں بھرے کمرے میں سونا پڑرہا ہے مگر یہ پنکھا بند اور اُن کا حملہ شروع۔ انشاء اللہ آج آپ کی بتائی ہوئی بات پر عمل کروں گا۔ ہوسکتا ہے اس سے مچھروں کی محبت میں‌کچھ فرق پڑ جائے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *



%d bloggers like this: